Weather (state,county)

Dil Dukhaanay Ki Intehaa Kar Di


 دل دُکھانے کی انتہا کر دی
آزمانے کی انتہا کر دی
تیر تحفے میں بھیج کر اُس نے
ظلم ڈھانے کی انتہا کر دی
چونک کر نام پوچھنے والے
بھول جانے کی انتہا کر دی
جیت نے مات اوڑھ لی گویا
سر جُھکانے کی انتہا کر دی
دل کو ناسور کر دیا آخر
گھاؤ کھانے کی انتہا کر دی
خود کو کھونے کا بھی پتہ نہ چلا
اُس کو پانے کی انتہا کر دی
تا فلک ہو گیا دھواں سا بتول
راکھ اُڑانے کی انتہا کر دی
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔  

Dil Dukhaanay Ki Intehaa Kar Di
Aazmaanay Ki Intehaa Kardi
Teer Tohfay Mein Bhej Kar Osne
Zulm Dhaanay Ki Intehaa Kardi
Chonk Kar Naam Poochnay Waalay
Bhool Jaanay Ki Intehaa Kardi
Jeet Ne Maat Orh Li Goya
Sir Jhukaanay Ki Intehaa Kardi
Dil Ko Nasoor Kardlia Aakhir
Ghaao Khaanay Ki Intehaa Kardi
Phir Palat Kar Kubhi Nahee Dekha
Osne Jaanay Ki Intehaa Kardi
Khud Ko Khonay Ka Bhee Pata Na Chala
Osko Paanay Ki Intehaa Kardi
Ta-Falak Ho Gaya Dhuwaan Sa Batool
Raakh Uraanay Ki Intehaa Kardi
Powered by Blogger.