Weather (state,county)

Hum Apna Jo Qissah Sunane Lage


ہم اپنا جو قصّہ سنانے لگے
وہ بولے کہ پھر سر پھرانے لگے

کہا تھا اُٹھا پردہء شرم کو
وہ اُلٹا ہمیں کو اُٹھانے لگے

ذرا دیکھئے اُن کی صنّاعیاں
مجھے دیکھ کر مُنہ بنانے لگے

کہا میں نے مِل یا مجھے مار ڈال
وہ جھٹ آستینیں چڑہانے لگے

مجھے آتے دیکھا جونہی دور سے
قدم اور جلدی اُٹھانے لگے

اُٹھے وہ تو اک حشر برپا کیا
جو بیٹھے تو فتنہ اُٹھانے لگے

غذا غم میں تھی میری خونِ جگر
اب اعدا کا بھی رشک کھانے لگے

کمالِ تعشق نہیں ہے ہنوز
ابھی سے وہ منہ کو چھپانے لگے

خفا ہو کے جب بے بُلائے گیا
مجھے دیکھ کر مُسکرانے لگے

غنیمت ہے اتنا تو اُٹھا حجاب
کہ اب خواب میں بھی وہ آنے لگے

وہ دل کے اُڑانے سے واقف نہ تھے
ہمیں تو یہ گھاتیں بتانے لگے

مگر اُن پہ رازِ محبت کھُلا
جو مجروح سے بچ کے جانے لگے

میر مہدی مجروح
Powered by Blogger.