Weather (state,county)

Hum ne To Khair Us Se Shikayat Kabhi Na Ki


ہم نے تو خیر اُس سے شکایت کبھی نہ کی
ایسا نہیں کہ دل نے بغاوت کبھی نہ کی
 
کس حال میں ہیں اُس کے چاہنے والے
اُس نے یہ پوچھنے کی زحمت کبھی نہ کی
 
چاہا ہے میں نے جس کو بڑی شدت کے ساتھ
اس طرح اُس نے مجھ سے محبت کبھی نہ کی
 
ہر بات اُس کی ہم نے بڑے غور سے سُنی
لیکن بیاں اپنی حمایت کبھی نہ کی
 
اک آگ تھی کہ جس میں جلتے رہے عُمر بھر
اک درد تھا کہ جس میں خیانت کبھی نہ کی
 
Hum ne To Khair Us Se Shikayat Kabhi Na Ki
Aisa Nhi K Dil Ne Bagawat Kbhi Na Ki

Kis Haal Mein Hain Us K Chahney Waley
Usney Ye Puchney Ki Zehmat Kabhi Na Ki

Chaha Hai Main Jisko Bari Shiddaton K Saath
Es Tarha Usney Mujh Se Mohabbat Kabhi Na Ki

Har Baat Uski Humne Bari Ghor Se Suni !
Lekin Bayaan Apni Himayat Kabhi Na Ki

Ik Aag Thi Ke Jis Mein Jaltey Rahey Umr Bhar
Ik Dard Tha K Jis Mein Khayanat Kabhi Na Ki
Powered by Blogger.