Weather (state,county)

Kuch To Hawa Sard Thi, Kuch Tha Tera Khayal Bhi


کچھ تو ہوا بھی سرد تھی، کچھ تھا تیرا خیال بھی
دل کو خوشی کے ساتھ ساتھ ہوتا رہا ملال بھی

بات وہ آدھی رات کی، رات وہ پورے چاند کی
چاند بھی عین چیت کا اس پہ ترا جمال بھی

سب سے نظر بچا کے وہ مجھ کو کچھ ایسے دیکھتا
ایک دفعہ تو رک گئی گردش ماہ و سال بھی

دل تو چمک سکے گا کیا، پھر بھی ترش کے دیکھ لیں
شیشہ گران شہر کے ہاتھ کا یہ کمال بھی

اس کو نہ پا سکے تھے جب دل کا عجیب حال تھا
اب جو پلٹ کے دیکھئیے، بات تھی کچہ محال بھی

مری طلب تھا ایک شخص وہ جو نہیں ملا تو پھر
ہاتھ دعا سے یوں گرا، بھول گیا سوال بھی

اس کی سخن طرازیاں مرے لئے بھی ڈھال تھیں
اس کی ہنسی میں چھپ گیا اپنے غموں کا حال بھی

جا قریب شاہ رگ، جا امید وائم و خواب
اس کی رفاقتوں میں رات، ہجر بھی تھا وصال بھی

اس کے بازوؤں میں اور اس کو ہی سوچتے رہے
جسم کی خواہش پہ تھے روح کے اور جال بھی

شام کی نا سمجھ ہوا پوچھ رہی ہے اک پتا
موج ہوائے کوئے یار، کچھ تو مرا خیال بھی

پروین شاکر
Kuch To Hawa Sard Thi, Kuch Tha Tera Khayal Bhi,
Dilko Khushi Ke Sath Sath Hota Raha Malaal Bhi,

Baat Woh Aadhi Raat Ki, Raat Wo Pure Chand Ki,
Chand Bhi Ain Cheet Ka Uspe Tera Jamaal Bhi,

Sab Se Nazar Bacha Ke Wo Mujhko Kuch Aise Dekhta,
Ek Dafa To Ruk Gayi Gardash-E-Maa-O-Saal Bhi,

Dil To Chamak Sakega Kya, Phir Bhi Tarsh Ke Dekh Le,
Sheesha Garan-E-Shaher Ke Haath Ka Ye Kamal Bhi,

Usko Na Paa Sake The Jab Dilka Ajeeb Haal Tha,
Ab Jo Palat Ke Dekhe, Baat Thi Kuch Muhaal Bhi,

Meri Talab Tha Ek Shakhs Wo Jo Nahi Mila To Phir,
Haath Dua Se Yun Gira, Bhool Gaya Sawal Bhi,

Uski Sakhan Taraziyan Mere Liye Bhi Dhal Thi,
Uski Hansi Mein Chhup Gaya Apne Gamon Ka Haal Bhi,


Ja Qareeb-E-Sha'rag, Ja Bahid-E-Wa'am-O-Khwab,
Uski Rafaqaton Mein Raat, Hijr Bhi Wasl Bhi,

Uske Baazoun Mein Aur Usi Ko Sochte Rahe,
Jismki Khwahishon Pe The Rooh Ke Aur Jaal Bhi,

Shaam Ki Na Samajh Hawa Puchh Rahi Hai Ek Pata,
Mauj-E-Hawaye Koo'ey Yaar, Kuch To Mera Khayal Bhi..
Powered by Blogger.