Weather (state,county)

Meri Qasam Naa Jaiye

بہت دنوں کی بات ہے                                    
فِضا کو یاد بھی نہیں                                      
یہ بات آج کی نہیں                                         
بہت دنوں کی بات ہے                                    
شباب پر بہار تھی                                         
فضا بھی خوشگوار تھی                                 
نہ جانے کیوں مچل پڑا                                  
میں اپنے گھر سے چل پڑا                              

کسی نے مجھ کو روک کر                             
بڑی ادا سے ٹوک کر                                   
کہا تھا لوٹ‌ آئیے                                         
میری قسم نہ جائیے                                     

پر مجھے خبر نہ تھی                                  
ماحول پر نظر نہ تھی                                  
نہ جانے کیوں مچل پڑا                                
میں اپنے گھر سے چل پڑا                            
میں شہر سے پھر آ گیا                                 
خیال تھا کہ پا گیا                                        
اسے جو مجھ سے دور تھی                           
مگر میری ضرور تھی                                 
اور اک حسین شام کو                                   
میں چل پڑا سلام کو                                     

گلی کا رنگ دیکھ کر                                   
نئی ترنگ دیکھ کر                                      
مجھے بڑی خوشی ہوئی                               
میں کچھ اسی خوشی میں تھا                          
کسی نے جھانک کر کہا                                
پرائے گھر سے جائیے                                 
میری قسم نہ آئیے                                       

وہی حسین شام ہے                                      
بہار جس کا نام ہے                                      
چلا ہوں‌ گھر کو چھوڑ کر                             
نہ جانے جاؤں گا کدھر                                 
کوئی نہیں جو ٹوک کر                                 
کوئی نہیں جو روک کر                                
کہے کہ لوٹ آئیے                                      
میری قسم نہ جائیے
Powered by Blogger.