Weather (state,county)

Muje Yoom e Mohabbat Per Tumhen Kuch Bhi Nahin Dena...


مجھے یومِ محبّت پر تمھیں کچھ بھی نہیں دینا ۔۔۔

یہ تاکیدِ محبّت ھے

یا تجدیدِ محبّت ھے

مگر جو کچھ بھی ھے جاناں

یہ توحیدِ محبّت ھے

سو توحیدِ محبّت میں بچھڑنے کا کبھی دھڑکا نہیں ہوتا

بجز چاہت کسی دل میں کوئی جذبہ نہیں ھوتا

کبھی تاکید یا تجدید کی نوبت نہیں آتی

کوئی کاغذ، کوئی خط، پھول یا تحفہ نہیں ھوتا

مری آنکھوں میں جتنے رنگ ہیں اُن سب میں چاہت ھے

مرے ہونٹوں پہ جتنے لفظ ہیں اُن میں عقیدت ھے

تمھیں معلوم ہے کہ چاہت تو اِک ایسی حقیقت ھے

جسے لفظوں، خطوں، پھولوں یا تحفوں کی

ضرورت ھی نہیں ھوتی

جہاں سے نکل کر بات خود دل تک پہنچتی ھے

جہاں آنکھوں سے نکلے اشک خود اظہار کرتے ھیں

کہ ھم کس حال میں ھیں

اور کتنا پیار کرتے ہیں

سو اے جانِ غزل دیکھو

مری آنکھیں، دھڑکتا دل اور ان میں موجزن جذبے

مری چاہت کا تحفہ ھیں

مری چاہت کے سب تحفے تمھارے پاس ھیں جاناں

مجھے یومِ محبّت پر تمھیں کچھ بھی نہیں دینا.....!!
Powered by Blogger.