Weather (state,county)

Shahon ki tarah thy na Ameeron ki trah thy


شاہوں کی طرح تھے نہ امیروں کی طرح تھے،
ہم شہر محبت کے فقیروں کی طرح تھے ،

دریاؤں میں ہوتے تھے جزیروں کی طرح ہم،
صحراؤں میں پانی کے ذخیروں کی طرح تھے،

افسوس کے سمجھا نہ ہمیں اہلِ نظر نے،
ہم وقت کی زنبیل میں ہیروں کی طرح تھے،

ہائے غم دل یوں بنا زنجیـر انا کـی،
آزاد بھی تھے ہم تو اسیروں کی طرح تھے،

حیرت ہے کہ وہ لـوگ بھی اب چھـوڑ چلے ہیں،
جو شفقت کی ہتھیلی پہ لکیروں کی طرح تھے،
سوچی نہ بری سوچ کبھی ان کے لئے بھی،
پیوستہ میرے دل میں جو تیروں کی طرح تھے،
وہ شعر میرے آج میرا جُرم بنے ہیں،
کل تک جو محبت کے سفیروں کی طرح تھے، 

اب رہ گئے ہم صرف روایت کـی صـورت،
جب تھے تو ہمہ رنگ نظیروں کی طرح تھے،
  ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
Shahon ki tarah thy na Ameeron ki trah thy,
Ham Sheher E Mohabbat k Faqeeron ki tarah thy,

Daryaon mein hoty thay Jazeeron ki tarah ham,
Sehraon mein Pani k Zakheron ki tarah thy,

Afsos k samjha na hamein Ehel E Nazar ny,
Ham waqt ki Zanmbeel mein Heeron ki tarah thy,

haey Gham e dil youn bna Zanjeer ana ki,
Aazad bhi thay ham to Aseeron ki tarah thy,

Hairat hai k woh log bhi ab chhor chaly hain,
Jo meri Hatheli py Lakeron ki tarah thy,

Sochi na Buri soch kabhi un k liay bhi,
Pevast mery dil mein jo Teeron ki tarah thy,

Wo Shair mery aj mera Jurm bany hain,
Kal tak jo Mohabbat k Saferoon ki tarah thy,
Ab reh gaye hum sirf rwayat ki soorat,
jb the to hima rang nazeeron ki trah the
Powered by Blogger.