Weather (state,county)

Yun Hi Besabab Na Phira Karo

یونہی بے سبب نہ پھرا کرو ۔۔ کوئی شام گھر بھی رہا کرو
وہ غزل کی سچی کتاب ہے ۔۔ اُسے چُپکے چُپکے پڑھا کرو

کوئی ہاتھ بھی نہ ملائے گا، جو گلے مِلو گے تپاک سے
یہ نئے مزاج کا شہر ہے، ذرا فاصلے سے مِلا کرو

کبھی حُسن پردہ نشین ہو تو ذرا عاشقانہ لباس میں
جو میں بن سنور کر چلا کروں، میرے ساتھ تم بھی چلا کرو

مجھے اِشتہار سی لگتی ہیں یہ محبتوں کی کہانیاں
جو کہا نہیں وہ سُنا کرو، جو سُنا نہیں وہ کہا کرو

نہیں بے حجاب وہ چاند سا کہ نذر کا کوئی اثر نہ ہو
اُسے اِتنی گرمئ شوق سے بڑی دیر تک نہ تکا کرو

یہ خزاں کی زرد شام میں جو اُداس پیڑ کے پاس ہو
یہ تمہارے گھر کی بہار ہے، اِسے آنسوؤں سے ہرا کرو

ابھی راہ میں کئی موڑ ہیں، کوئی آئے گا، کوئی جائے گا
تمہیں جس نے دِل سے بُھلا دیا اُسے بُھولنے کی دُعا کرو
yun hi besabab na phira karo, koi shaam ghar bhi raha karo
vo Gazal kii sachchii kitaab hai, use chupake chupake padaa karo

koi haath bhi na milayega, jo gale miloge tapak se
ye naye mizaj ka shahar hai, zara faaale se mila karo
kabhi husn-e-pardaanashin bhii ho zaraa aashiqana libaas mein
jo main ban-sanvar ke kahin chalun, mere saath tum bhii chalaa karo

mujhe ishtahaar si lagti hain, ye mohabbaton ki kahaniyaan
jo kahaa nahi vo suna karo, jo suna nahi vo kahaa karo

nahn behijaab vo chaand saa ki nazar kaa koi asar nahin
use tani garmi-e-shauq se badi der tak na taka karo  

ye Khiza ki zard-si shaam mein, jo udaas pe'do ke paas hai
ye tumhare ghar ki bahaar hai, ise aansuon se hara karo
 abhi raah mein kai mor hain, koi aayega koi jaayega
tumhein jisne dil se bhulaa diya use bhulane ki duaa karo
Powered by Blogger.