Weather (state,county)

Aaj Roothy Hue Saajan Ko Bahut Yaad Kia...

تمہیں اداس سا پاتا ہوں میں کئی دن سے
نہ جانے کون سے صدمے اٹھا رہی ہوتم
وہ شوخیاں وہ تبسم وہ قہقہے نہ رہے
ہر ایک چیز کو حسرت سے دیکھتی ہو تم
چھپا چھپا کے خموشی میں اپنی بے چینی
خود اپنے راز کی تشہیر بن گئی ہو تم 

میری امید اگر مٹ گئی تو مٹنے دو
امید کیا ہے بس اک پیش و پس ہے کچھ بھی نہیں
میری حیات کی غمگینیوں کاغم نہ کرو
غمِ حیات غم یک نفس ہے کچھ بھی نہیں
تم اپنے حسن کی رعنائیوں پہ رحم کرو
وفا فریب ہے، طول ہوس ہے کچھ بھی نہیں 

مجھے تمہارے تغافل سے کیوں شکایت ہو؟
مری فنا مرے احساس کا تقاضا ہے
میں‌ جانتا ہوں کہ دنیا کا خوف ہے تم کو
مجھے خبر ہے یہ دنیا عجیب دنیا ہے
یہاں حیات کے پردے میں موت پلتی ہے
شکستِ ساز کی آواز روحِ نغمہ ہے 

مجھے تمہاری جدائی کا کوئی رنج نہیں
مرے خیال کی دنیا میں‌میرے پاس ہو تم
یہ تم نے ٹھیک کہا ہے تمہیں ملا نہ کروں
مگر مجھے یہ بتا دو کہ کیوں اداس ہو تم
خفا نہ ہونا مری جرأت تخاطب پر؟
تمہیں‌خبر ہے مری زندگی کی آس ہو تم

مرا تو کچھ بھی نہیں ہے میں رو کے جی لوں گا
مگر خدا کے لیے تم اسیرِ‌غم نہ رہو
ہوا ہی کیا جو زمانے نے تم کو چھین لیا
یہاں پہ کون ہوا ہے کسی کا، سوچو تو
مجھے قسم ہے مری دکھ بھری جوانی کی
میں خوش ہوں میری محبت کے پھول ٹھکرا دو 

میں اپنی روح کی ہر اک خوشی مٹا لوں گا
مگر تمہاری مسرت مٹا نہیں سکتا
میں‌ خود کو موت کے ہاتھوں میں‌سونپ سکتاہوں
مگر یہ بارِ مصائب اٹھا نہیں سکتا
تمہارے غم کے سوا اور بھی تو غم ہیں مجھے
نجات جن سے میں اک لحظہ پا نہیں ‌سکتا 

یہ اونچے اونچے مکانوں کی ڈیوڑھیوں کے تلے
ہر ایک گام پہ بھوکے بھکاریوں کی صدا
ہر ایک گھر میں ہے افلاس اور بھوک کا شور
ہر ایک سمت یہ انسانیت کی آہ و بکا
یہ کارخانوں میں لوہے کا شوروغل جس میں
ہےدفن لاکھوں غریبوں کی روح کا نغمہ 

یہ شاہراہوں پہ رنگین ساڑھیوں کی جھلک
یہ جھونپڑوں میں‌غریبوں کے بے کفن لاشے
یہ مال روڈ پہ کاروں کی ریل پیل کا شور
یہ پٹڑیوں پہ غریبوں کے زرد رو بچے
گلی گلی میں یہ بکتے ہوئے جواں چہرے
حسین آنکھوں میں افسردگی سی چھائی ہوئی 

یہ جنگ اور یہ میرے وطن کے شوخ جواں
خریدی جاتی ہے اٹھتی جوانیاں جن کی
یہ بات بات پہ قانون و ضابطے کی گرفت
یہ ذلّتیں، یہ غلامی یہ دورِ مجبوری
یہ غم بہت ہیں مری زندگی مٹانے کو
اداس رہ کے مرے دل کو اور رنج نہ دو
Tumhe Udaas Sa Paata Hoon Main Kayi Din Se,
Na Jaane Kaun Se Sadme Utha Rahi Ho Tum,
Wo Shokhiyan Wo Tabassum, Wo Kahkahe Na Rahe,
Har Ek Chiz Ko Hasrat Se Dekhti Ho Tum,
Chhupa Chhupa Ke Khamosh Mein Apni Bechaini,
Khud Apne Raaz Ki Taashir Ban Gayi Ho Tum,

Meri Ummeed Agar Mit Gayi To Mitne Do,
Ummeed Kya Hai Bas Ek Paas-O-Pesh Hai Kuch Bhi Nahi,
Meri Hayaat Ki Ghamgeeno Ka Gham Na Karo,
Gham Hayat-E-Gham Yaq Naqs Hay Kuch Bhi Nahi,
Tum Apne Husn Ki Ranaaiyon Par Rehem Karo,
Wafa Fareb Tul Hawas Hai Kuchh Bhi Nahi,

Mujhe Tumhare Tagaaful Se Kyon Shikayat Ho,
Meri Fana Mere Ehsaas Ka Taqaza Hia,
Main Jaanta Hoon Ke Duniya Ka Khauf Hai Tumko,
Mujhe Khabar Hia Ye Duniya Ajeeb Duniya Hai,
Yahan Hayaat Ke Parde Mein Maut Chalti Hai,
Shikast Saaz Ki Aawaz Mein Ruu Nagma Hai,

Mujhe Tumhari Judayi Ka Koi Ranj Nahin,
Mere Khayal Ki Duniya Mein Mere Paas Ho Tum,
Ye Tumne Thik Kaha Hai Tumhein Mila Na Karun,
Magar Mujhe Bata Do Ke Kyon Udaas Ho Tum,
Khafa Na Ho Meri Jurrat-E-Takhtab Par,
Tumhein Khabar Hai Meri Zindagi Ki Aas Ho Tum,

Mera To Kuchh Bhi Nahin Hia Main Ro Ke Jee Lunga,
Magar Khuda Ke Liye Tum Aaseer-E-Gam Na Raho,
Hua Hi Kya Jo Zamane Ne Tumko Chheen Liya,
Yahan Par Kuan Hua Hai Kisi Ka Socho To,
Mujhe Kasam Hai Meri Dukh Bhari Jawani Ki,
Main Khush Hono Meri Mohabbat Ke Phool Thukra Do,

Main Apni Rooh Ki Har Ek Khushi Mita Lunga,
Magar Tumhari Masarrat Mita Nahi Sakta,
Main Khud Ko Maut Ke Haathon Mein Saunp Sakta Hoon,
Magar Ye Bar-E-Musaayib Utha Nahin Sakta,
Tumhare Gam Ke Siwa Aur Bhi To Gam Hai Mujhe,
Nijaat Jinse Main Ek Lahaza Paa Nahi Sakta,

Ye Unche Unche Makano Ki Devadiyon Ke Tale,
Har Kaam Pe Bhuke Bhikariyon Ki Sada,
Har Ek Ghar Mein Aflaas Aur Bhookh Ka Shor,
Har Ek Simt Ye Insaaniyat Ki Aah-O-Booka,
Ye Kaarkhano Mein Lohe Ka Shor-O-Gul Jis Mein,
Hai Dafan Laakhon Gareebon Ki Rooh Ka Nagma,

Ye Sharahon Pe Rangeen Sadiyon Ki Jhalak,
Ye Jhonpdiyon Mein Gareebon Ke Be-Qafan Laashein,
Ye Maal Road Pe Karon Ki Rail Pail Ka Shor,
Ye Patariyon Pe Gareebon Ke Zard Roo Bachhe,
Gali Gali Mein Bikte Hue Jawaan Chehre,
Haseen Aankhon Mein Afsurdagi Si Chhayi Hui,

Ye Jang Aur Ye Mere Watan Ke Shokh Jawaan,
Khareedi Jaati Hia Uthati Jawaniyan Jinki,
Ye Baat Baat Pe Kanoon Aur Zabte Ki Giraft,
Ye Zisq Ki Gulami Ye Daur-E-Majboori,
Ye Gam Hai Bahut Meri Zindagi Mitane Ko,
Udaas Rehke Mere Dilko Aur Ranj Na Do...


Powered by Blogger.