Weather (state,county)

وہابیوں بتائو ! کیا یہ شرک نہیں ہے

کچھ عرصے پہلے سعودیہ عرب کا بادشاہ "شاہ عبداللہ" نے مدینہ منورہ میں زیارت رسول(ص) کے لئے گیا اور اس نے روضہ رسول (ص) پر جب حاضری دی تو اس نے وہاں روضہ رسول(ص) کی طرف ہاتھ اٹھا کر دعا مانگی ، جب کہ یہی وہابی ناصبی لوگ، عام لوگوں کو  جب وہ  زیارت کے لئے جاتے ہیں تو زائرین روضہ رسول کو منع کرتے ہیں کہ روضہ کی طرف ہاتھ اٹھا کر دعا مانگنا بدعت و شرک ہے اور زائرین کو مارتے ہیں اور بدعتی کہتے ہیں
ہم یہاں وہابی ملائوں سے سوال کرتے ہیں کہ تم لوگ اپنے بادشاہ کو کیوں نہیں منع کرتے ،اب اس پر بھی شرک و بدعتی کے فتوے لگائوں ،ایسے دوھرے معیار کیوں ہیں تم لوگوں کے ہاں

آپ لوگ مندرجہ ذیل تصویر میں شاہ عبداللہ کا یہ فعل دیکھ سکتے ہیں اور شاہ عبداللہ کے ساتھ مسجد نبوی (ص) کا مفتی بھی موجود ہے مگر یہ سب خاموش ہیں ،اپنے بادشاہ کے اس فعل سے

اللہ تعالیٰٰ ! تمام امت مسلمہ کو وہابی فتنے سے محفوظ رکھے 
(آمین)
Powered by Blogger.